Blog Home Member's Area  AastanaBlog: AASTANA.COM 

Join AASTANABLOG
Share your Quranic thoughts, research and knowledge with other's.
It's free, easy and only takes a minute.
Sign up Now

TRANSLATION OF QURAN
BY DR. QAMAR ZAMAN
Translation Status
آیات
سورۃ
نمبر
1-7 الفَاتِحَة -1
1-286 البَقَرَة -2
1-200 آل عِمرَان -3
1-176 النِّسَاء -4
1-120 المَائدة -5
1-165 الاٴنعَام -6
1-206 الاٴعرَاف -7
1-75 الاٴنفَال -8
1-129 التّوبَة -9
1-109 یُونس -10
1-123 هُود -11
1-111 یُوسُف -12
1-43 الرّعد -13
1-52 إبراهیم -14
1-99 الحِجر -15
1-128 النّحل -16
1-111 بنیٓ اسرآئیل / الإسرَاء -17
1-110 الکهف -18
1-98 مَریَم -19
1-135 طٰه -20
1-112 الاٴنبیَاء -21
1-78 الحَجّ -22
1-118 المؤمنون -23
1-64 النُّور -24
1-77 الفُرقان -25
1-227 الشُّعَرَاء -26
1-93 النَّمل -27
1-88 القَصَص -28
1-69 العَنکبوت -29
1-60 الرُّوم -30
1-34 لقمَان -31
1-30 السَّجدَة -32
1-73 الاٴحزَاب -33
1-54 سَبَإ -34
1-45 فَاطِر -35
1-83 یسٓ -36
1-182 الصَّافات -37
1-88 صٓ -38
1-75 الزُّمَر -39
1-85 المؤمن / غَافر -40
1-54 حٰمٓ السجدة / فُصّلَت -41
1-54 القَمَر -54
Read Now


»«
ARTICLES
SIRAT E MUSTAQEEM
Add Your QuestionView More QuestionsEmail this DiscussionPrinter Friendly View
New article صراط مستقیم by Dr. Qamar Zaman is uploaded now.
Add Your Comments  Question by: ADNAN On 07 September 2011
Comments by: aamiralwaz On 24 September 2012Report Abuse
Dear Dr. Qamar Sahab and Moazzam Sahab. Following is quoted in respect of Sirat e Mustaqeem:  
 
قُلْ تَعَالَوْا أَتْلُ مَا حَرَّمَ رَبُّكُمْ عَلَيْكُمْ أَلا تُشْرِكُوا بِهِ شَيْئًا وَبِالْوَالِدَيْنِ إِحْسَانًا وَلا تَقْتُلُوا أَوْلادَكُمْ مِنْ إِمْلاقٍ نَحْنُ نَرْزُقُكُمْ وَإِيَّاهُمْ وَلا تَقْرَبُوا الْفَوَاحِشَ مَا ظَهَرَ مِنْهَا وَمَا بَطَنَ وَلا تَقْتُلُوا النَّفْسَ الَّتِي حَرَّمَ اللَّهُ إِلا بِالْحَقِّ ذَلِكُمْ وَصَّاكُمْ بِهِ لَعَلَّكُمْ تَعْقِلُونَ O وَلا تَقْرَبُوا مَالَ الْيَتِيمِ إِلا بِالَّتِي هِيَ أَحْسَنُ حَتَّى يَبْلُغَ أَشُدَّهُ وَأَوْفُوا الْكَيْلَ وَالْمِيزَانَ بِالْقِسْطِ لا نُكَلِّفُ نَفْسًا إِلا وُسْعَهَا وَإِذَا قُلْتُمْ فَاعْدِلُوا وَلَوْ كَانَ ذَا قُرْبَى وَبِعَهْدِ اللَّهِ أَوْفُوا ذَلِكُمْ وَصَّاكُمْ بِهِ لَعَلَّكُمْ تَذَكَّرُونَ O وَأَنَّ هَذَا صِرَاطِي مُسْتَقِيمًا فَاتَّبِعُوهُ وَلا تَتَّبِعُوا السُّبُلَ فَتَفَرَّقَ بِكُمْ عَنْ سَبِيلِهِ ذَلِكُمْ وَصَّاكُمْ بِهِ لَعَلَّكُمْ تَتَّقُونَ  
 
کہو کہ آؤ میں تمہیں بتاؤں جو تمہارے رب نے تم پرحرام کیا ہے ۔۔۔۔  
کہ تم اپنے رب کے ساتھ کچھ بھی شرک کرو، اور یہ کہ ....  
۱ ۔۔۔۔ والدین کے ساتھ حسن سلوک اختیار کرو۔  
۲۔۔۔ اور اپنی اولاد کو کسی تنگ دستی کی وجہ سے ہلاکت و بربادی میں ڈالو، ہم تم کو بھی ضروریات زندگی بہم پہچاتے ہیں اور انہیں بھی۔  
۳۔۔۔ اور فواحش (غیر از قرآن تعلیمات) کے خواہ ظاہر ہوں یا ڈھکے ہو ئے، قریب بھی نہ پھٹکنا۔  
۴۔۔۔ اور کسی ایسے شخص کے ساتھ لڑائی نہ کرنا جس سے لڑائی کرنا قوانین الٰہی نے روکا ہو، سوائے حقوق کی بنیاد پر۔  
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ وہ ہدایات ہیں جن کا تم کو حکم دیا جاتا ہے، تاکہ تم عقل استعمال کرو۔  
۵۔۔۔ یتیم کے مال کے قریب بھی نہ جانا، سوائے حسن کارانہ انداز سے، یہاں تک کہ وہ بلوغت کو پہنچیں۔  
۶۔۔۔ اور اپنے ناپ تول کو پورا رکھو انصاف کے ساتھ، ہم کسی کو بھی مکلف نہیں ٹھہراتے، سوائے اس کی وسعت کے مطابق۔  
۷۔۔ اور جب بھی کوئی بات کرو تو عدل کرو، خواہ اپنے قریبی کیوں نہ ہوں۔  
۸۔۔ اور اللہ کے ساتھ کیے گئے عہد کو پورا کرو۔  
۔۔۔۔ یہ احکام تم کو اس لیے دئیے جا رہے ہیں تاکہ تم یاد رکھو۔  
۹۔۔ یہ ہے میری صراط مستقیم، پس اس کی اتباع کرو اور کسی دوسری راہ کی اتباع نہ کرنا کہ اس کے ساتھ تم کو اللہ کے راستے سے فرق کر دے۔  
۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ تم کو اس لیے حکم دیا جا رہا ہے کہ تم متقی بنو۔  
 
Just a layman question, it appears from the above ayats that all instructions given is for society perspective. I have an apprehension, only two things appeared in the aforesaid translation give an impression of "PERSONAL TOUCH". WALDEN and AULAD. Otherwise the whole translation is dealing with the third persons in the society.  
 
As I m not expert in Arabic Language, however, I just want to ask you that can we considered these two terms as "WALDEN" for those people who are working as Authorities in Society and AULAD for those people who are working under WALDEN to keep the flow of these ayats relevant to society only. Moreover, I got no relevance in these ayats to describe the Parents and Children issue as a matter of "Sirat e Mustaqeem".  
 
Just a Matter of Thinking!!!!  
 
Regards.  
 
Aamir

Comments by: moazzam On 25 September 2012
Brother Aamir! وَالِدَيْنِ =The responsible institutions/state who produce/educate/trains/care individuals.  
Although it means parents, but here the matter should be seen in a broad spectrum of society.  
أَوْلادَ= ا ولاد سے مراد اس ریاست کے باشندے ہیں  
Refer to verse 4/11يُوصِيكُمُ اللَّهُ فِي أَوْلَادِكُمْ ۖ لِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الْأُنثَيَيْنِ ۚ فَإِن كُنَّ نِسَاءً فَوْقَ اثْنَتَيْنِ فَلَهُنَّ ثُلُثَا مَا تَرَكَ ۖ وَإِن كَانَتْ وَاحِدَةً فَلَهَا النِّصْفُ ۚ وَلِأَبَوَيْهِ لِكُلِّ وَاحِدٍ مِّنْهُمَا السُّدُسُ مِمَّا تَرَكَ إِن كَانَ لَهُ وَلَدٌ ۚ فَإِن لَّمْ يَكُن لَّهُ وَلَدٌ وَوَرِثَهُ أَبَوَاهُ فَلِأُمِّهِ الثُّلُثُ ۚ فَإِن كَانَ لَهُ إِخْوَةٌ فَلِأُمِّهِ السُّدُسُ ۚ مِن بَعْدِ وَصِيَّةٍ يُوصِي بِهَا أَوْ دَيْنٍ ۗ آبَاؤُكُمْ وَأَبْنَاؤُكُمْ لَا تَدْرُونَ أَيُّهُمْ أَقْرَبُ لَكُمْ نَفْعًا ۚ فَرِيضَةً مِّنَ اللَّهِ ۗ إِنَّ اللَّهَ كَانَ عَلِيمًا حَكِيمًا  
تمہاری عوام کے بارے میں احکام الٰہی تمہیں ہدایت کر تے ہیں کہ: مغلوب ریاستوں کے اثاثے میں ان ممالک کے حکومتی اداروں کا حصہ عمومی اداروں سے مقابلتاً دوگنا ہو گا، لیکن اگر عوامی ادارے زیادہ ہوں تو جو ریاست نے چھوڑا ہے اس کا دو تہائی اور اگر قومی اداروں میں عمومی ادارے اور حکومتی ادارے برابر کے ہوں تو دونوں میں برابر حصے ہوں گے۔ اور ریاست کے حکماء اور ان کے متعلقہ اداروں کے لیے ہر ایک کا حصہ چھٹا ہو گا بشرطیکہ ان پر عوام کی ذمہ داری ہو اور اگر ان پر عوام کی ذمہ داری نہ ہو تو ریاست کے حکماء اور ان کے متعلقہ ادارے کو صرف چھٹا حصہ ملے گا۔ اور اگر مغلوب ریاست کی ذمہ داری میں کئی چھوٹی ریاستیں بھی ہوں تو مرکزی ادارے کے لیے چھٹا حصہ ہو گا۔ یہ تقسیم مغلوب ریاست کے معاہدات کو پورا کرنے اور قرض اتارنے کے بعد عمل میں آئے گی۔ تم نہیں جانتے کہ تمہارے حکماء اور عوام میں سے کون بلحاظ نفع تم سے قریب تر ہے۔ یہ قوانین قدرت نے مقرر کر دیئے ہیں، اور وہ یقیناً بربنائے حکمت جاننے والی ہے۔  
 

Comments by: aamiralwaz On 25 September 2012 Edit DeleteReport Abuse
Thank you Mozzam Sahab for your reply. It certainly clears my query.  
 
Regards.  
 
Aamir.

»«
OTHER QUESTIONS ON
SIRAT E MUSTAQEEM
Dr. Sahib, jis terha ap Quran samjhate hen uss me hr baat ryasat aur shehri k gird ghoomti ha,to phir Quran me faraq ilfaaz Q ai hen, Aulad,Waliden,Mian,Bivi,Lrke,lrkian,mrd,aurat waghera?? Question by: shaista From PAKISTAN (LAHORE) On 22/01/2014
 
Comments...
Blog Home Question Explorer Member's Area Mission & Vision Join AASTANABLOG
© 2006-2010 Aastana e Research and Understanding Quran. All Rights Reserved
www.aastana.com